Day: October 5, 2020

Science

ایمازون کے 19 ہزار سے زائد ملازمین کورونا میں مبتلا

آن لائن ریٹیل کی عالمی شہرت یافتہ امریکی کمپنی ایمازون کا کہنا ہے کہ ان کے اب تک 19 ہزار سے زائد ملازمین عالمی وبا کورونا وائرس کا شکار ہوچکے ہیں۔ گزشتہ مہینوں میں متعدد ملازمین اور عہدیداران نے ایمازون پر تنقید کی تھی کہ انہوں نے عالمی وبا کے دوران اپنے وئیر ہاؤسز (گوداموں) کو کھلا رکھ کر ملازمین کی صحت کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔ اب ایمازون کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ان کے ملازمین میں عالمی وبا کورونا وائرس کا تناسب ان کی توقعات سے 42 فیصد کم ہے۔ ایمازون کے مطابق ان کے 13 لاکھ 72 ہزار فرنٹ لائن ملازمین میں سے 19 ہزار 816 ملازمین کے کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آئے ہیں۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ نومبر تک اپنے ملازمین میں کورونا وائرس ٹیسٹنگ کی تعداد کو بڑھا کر یومیہ 50 ہزار کررہی ہے۔ خیال رہے کہ عالمی وبا کے پیشِ نظر تمام تر شاپنگ مالز اور مارکیٹیں بند ہیں جس کی وج...
Health

کووڈ 19 کا خطرہ کم کرنا چاہتے ہیں؟ تو اس طاقتور ہتھیار سے مدد لیں

350 قبل مسیح میں ارسطو کی جانب سے نیند کے حوالے سے ایک تحریر میں عندیہ دیا تھا کہ کھانا ہضم کرنے کے دوران معدے میں گرم بخارات نیند کا باعث بنتے ہیں اور بخار کے شکار افراد کو نیند سے جلد صحتمند ہونے میں مدد ملتی ہے۔ ویسے یہ بخارات کا خیال تو ثابت نہیں ہوسکا مگر سائنسی شواہد سے یہ ضرور معلوم ہو چکا ہے کہ اچھی نیند عام نزلہ زکام، انفلوائنزا اور نظام تنفس کی بیماریوں کے خلاف نظام تنفس کو طاقتور بناتی ہے۔ اس تحقیقی کام سے عندیہ ملتا ہے کہ نیند ممکنہ طور پر کورونا وائرس کی وبا سے لڑنے کے لیے ایک طاقتور ہتھیار ثابت ہوسکتی ہے، جو نہ صرف کووڈ 19 کا شکار ہونے یا اس کی شدت کم رکھنے میں مدد دے سکتی ہے، بلکہ وہ اس کی روک تھام کے لیے تیار ہونے والی ویکسینز کی افادیت بھی بہتر کرسکتی ہے۔ ہارورڈ میڈیکل اسکول کی ماہر مونیکا ہاک کے مطابق 'ہمارے پاس ایسے متعدد شواہد ہیں جن سے عندیہ ملتا ہے کہ مناسب ووقت ...
Health

کووڈ ویکسین کی دستیابی 2021 کی آخری سہ ماہی سے قبل ممکن نہیں: تحقیق

طبی ماہرین کا ماننا ہے کہ کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے ایک موثر ویکسین کی عام افراد کے لیے دستیابی 2021 کی چوتھی سہ ماہی تک ممکن نہیں۔ یہ بات کینیڈا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی جس میں ویکسین کی تیاری کے شعبے سے تعلق رکھنے والے ماہرین سے رائے لی گئی۔ میک گل یونیورسٹی کی اس سروے نما تحقیق میں ویکسینولوجی کے شعبے کے 28 ماہرین سے رائے لی گئی تھی۔ اس تحقیق کا آغاز جون کے آخر میں ہوا تھا اور اس میں شامل بیشتر ماہرین کا تعلق کینیڈا یا امریکا سے تھا جو اپنے شعبے میں اوسطاً 25 سال سے سرگرم تھے۔ محقق جوناتھن کمیلمین نے بتایا کہ کہ ہمارے سروے میں شامل ماہرین نے ویکسین کی دستیابی کے حوالے سے اپنی پیشگوئیوں میں اس بات کا بہت کم امکان ظاہر کیا کہ کوئی کورونا ویکسین 2021 کے آغاز میں لوگوں کے لیے دستیاب ہوسکتی ہے۔ درحقیقت بیشتر کا تو ماننا تھا کہ اگر اگلے سال موسم گ...
Health

سینے میں جلن کی عام دوا سے ٹائپ 2 ذیابیطس کا خطرہ، اہم تحقیق سامنے آ گئی

چینی، امریکی اور ہانگ کانگ کے ماہرین نے ایک مشترکہ تحقیق سے دریافت کیا ہے کہ جو افراد سینے کی جلن میں پروٹون پمپ انہبیٹرز (پی پی آئیز) کہلانے والی عام دوائیں استعمال کرتے ہیں، انہیں یہ دوائیں استعمال نہ کرنے والے افراد کے مقابلے میں ٹائپ 2 ذیابیطس کا خطرہ 24 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ یہ نتیجہ دو لاکھ سے زائد امریکی شہریوں کی میڈیکل ہسٹری جاننے کے بعد اخذ کیا گیا ہے۔ بتاتے چلیں کہ معدے میں تیزابیت بڑھنے کی وجہ سے بعض مرتبہ غذا کا کچھ حصہ پلٹ کر معدے کے دہانے سے منسلک غذائی نالی (ایسوفیگس) میں داخل ہوجاتا ہے۔ نتیجتاً سینے کے نچلے حصے میں درد کی ایک شدید لہر محسوس ہوتی ہے جسے ’’سینے میں جلن‘‘ یا ’’ہارٹ برن‘‘ بھی کہا جاتا ہے۔یہ ایک عمومی کیفیت ہے جس کے بارے میں ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر ہفتے میں دو یا اس سے زیادہ مرتبہ سینے میں جلن محسوس ہو تو ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہیے کیونکہ ی...
Health

کورونا وائرس کے باعث دنیا کی اکثریت خطرے میں ہے, عالمی ادارہ صحت

عالمی ادارہ صحت کے ایمرجنسی ماہر مائیک ریان کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث دنیا کی اکثریت خطرے میں ہے۔ عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے ایمرجنسی ماہر مائیک ریان نے ایگزیکٹو بورڈ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کورونا کی تحقیقات کے لیے چین کو عالمی ماہرین کی فہرست پیش کردی ہے۔ مائیک ریان کا کہنا ہے کہ جنوب مشرقی ایشیا کے کچھ حصوں میں وبا پھیل رہی ہے، اعداد و شمار کے مطابق دنیا کا 10 فیصد حصہ وائرس سے متاثر ہوچکا ہے، 10 فیصد متاثرین کا مطلب دنیا کی اکثریت خطرے میں ہے۔ ڈبلیو ایچ او کا کہنا ہے کہ دنیا میں ہر دس میں سے ایک شخص کورونا سے متاثر ہوسکتا ہے، جنوب مشرقی ایشیا اور شمالی بحیرہ روم کے کچھ حصوں میں وبا تیزی سے پھیل رہی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ دنوں عالمی ادارہ صحت نے کم قیمت کرونا ٹیسٹنگ کٹس ترقی پذیر ممالک کو فراہم کرنے کا اعلان کیا تھا، یہ کٹس 15 منٹ میں کرونا کی تش...
Health

کورونا ویکسین کی دستیابی کب تک ممکن ہو گی؟ طبی ماہرین کا بیان جاری

طبی ماہرین نے اب ایک نیا انکشاف کر دیا ہے کہ کووِڈ ویکسین کی دستیابی 2021 کی آخری سہ ماہی سے قبل ممکن نہیں ہے۔ کینیڈا میں ہونے والی ایک میڈیکل ریسرچ میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ایک مؤثر ویکسین کی عام افراد کے لیے دستیابی 2021 کی چوتھی سہ ماہی تک ممکن نہیں ہے۔ میک گل یونی ورسٹی کی اس سروے نما تحقیق میں ویکسینولوجی کے شعبے کے 28 ماہرین سے رائے لی گئی تھی، متعدد ماہرین کا ماننا تھا کہ کسی مؤثر ویکسین کی دستیابی سے قبل ممکن ہے کہ کسی قسم کا خراب آغاز بھی ہو، اگر اگلے سال موسم گرما تک بھی ویکسین دستیاب ہو تو یہ خوش آئند امر ہوگا۔ اپنے شعبے میں پچیس سال سے سرگرم کینیڈا اور امریکا سے تعلق رکھنے والے ان طبی ماہرین کا ماننا ہے کہ اس بات کا بہت کم امکان ہے کہ کوئی کرونا ویکسین 2021 کے آغاز میں لوگوں کے لیے دستیاب ہو سکتی ہے۔ سروے میں ماہرین کی رائے تھی کہ اس بات کا ایک تہائی ام...
Science

بھارت میں پب جی گیم ایک اور لڑکے کی مبینہ طور پر خود کشی کا باعث بن گئی

بھارت میں پب جی گیم پر پابندی کے باعث ذہنی دباؤ کا شکار رہنے والے لڑکے نے مبینہ طور پر خود کشی کرلی، اُس کی پھندا لگی لاش کمرے سے برآمد ہوئی۔ یہ واقعہ بھارتی شہر پٹنا میں پیش آیا، جہاں ایک 16 سالہ لڑکا گزشتہ ہفتوں سے ذہنی دباؤ اور پریشانی کا شکار تھا کیوں کہ حکومت نے ملک بھر میں پب جی گیم پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔ رپورٹ کے مطابق پب جی کے شوقین لڑکے نے مبینہ طور پر اسی ضمن میں اپنی جان لے لی، اس کی پھندا لگی لاش کمرے سے برآمد ہوئی۔ خیال رہے کہ گزشتہ ماہ بھارتی حکومت نے چین سے تنازعات کے بعد پب جی سمیت متعدد چینی ایپلیکیشنز کو اپنے ملک میں بند کی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکے نے کمرے میں خود کو بند کرکے خودکشی کی، گھر والوں نے دروازہ توڑ کر اسے باہر نکالا، لڑکے کی لاش پھنکے سے لٹک رہی تھی، پولیس نے واقعے سے متعلق تحقیقات کا بھی آغاز کردیا ہے۔ پولیس کے مطابق لڑکے نے...