کورونا وائرس سے نئی تباہی کیا ہوگی؟ ماہرین نے خبردار کردیا


برطانوی ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ ملک میں کورونا کی دوسری لہر سے ایک لاکھ سے زائد افراد مارے جائیں گے، اسپتالوں میں سخت حکمت عملی کی ضرورت ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ماہرین کا ماننا ہے کہ برطانیہ میں کورونا کی دوسری لہر موسم سرما میں آئے گی، جس کے باعث تقریباً ایک لاکھ بیس ہزار مریضوں کی اموات ممکن ہیں۔

انہوں نے کہا کہ رواں سال ستمبر سے برطانیہ کو وبا کی دوسری لہر کے علاوہ سردیوں کے پیش نظر نزلہ زکام جیسی بیماریوں کا بھی سامنا کرنا پڑے گا، ملک میں لاک ڈاؤن میں نرمی اور موسم سرما کورونا کے پھیلاؤ میں مدد دے سکتے ہیں۔

برطانیہ کے 37 سائنس دانوں کی ایک تحقیق کے مطابق 2021 کا آغاز کورونا کی دوسری لہر کے عروج کا ہوگا۔

پروفیسر اسیٹفن کا کہنا ہے کہ یہ کوئی پیش گوئی نہیں بلکہ حقیقت کی عکاسی ہے، اگر ہم فوری اور بروقت ایکشن لیتے ہیں تو ممکنہ خطرے کو کافی حد تک کم کرسکتے ہیں۔

خیال رہے کہ امریکا اور یورپی ممالک سمیت برطانیہ بھی کورونا سے شدید متاثر ہے۔ نئے وائرس کو وِڈ نائنٹین کی عالمگیر وبا نے 213 ممالک میں 5 لاکھ سے انسانی جانیں نگل لیں۔

وائرس سے اب تک 1 کروڑ 30 لاکھ سے زائد افراد متاثر ہو چکے ہیں۔ بدقسمتی سے اس مرض کی اب تک کوئی ویکسین تیار نہیں ہوئی۔




Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *