سرچ انجن گوگل نے کن ایپس کا کردیا صفایا؟ تشویشانک صورتحال سے نمٹ لیا گیا


دنیا میں کے سب سے بڑے سرچ انجن گوگل نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک کی لاگ اِن تفصیلات چوری کرنے پر 25 موبائل ایپس پر پابندی عائد کر دی ہے۔

ان اپیس کو پلے اسٹور سے ہٹا دیا گیا ہے اور اس پہلے فروری میں بھی گوگل نے 600 ایپس پر پابندی عائد کی تھی۔

سائبرسیکیوریٹی فرم ایوینا کی جانب سے گوگل کو الرٹ جاری کیا گیا جس کے بعد گوگل پلے اسٹور سے اینڈرائڈ ایپس کو فوری طور ہٹایا۔ ایپس میں ایسا سسٹم موجود تھا جو آپ کے فون استعمال کرنے پر فیس بک لاگ ان کی تفصیلات کا ریکارڈ کر لیتا تھا۔

رپورٹ کے مطابق ایپس کو بیس لاکھ مرتبہ ڈاؤن لوڈ کیا گیا تھا۔ جن ایپس کو گوگل نے اپنے پلے اسٹور سے ہٹایا ہے ان میں سے کچھ تصویرایڈیٹنگ، ویڈیو ایڈیٹنگ، وال پیپر، ٹارچ لائٹ ایپلی کیشنز ، فائل منیجر اور موبائل گیمز شامل تھیں۔

ان میں سے سپر وال پیپرز ٹارچ اور پیڈینیٹف وہ واحد ایپس تھیں جو 500،000 بار ڈاؤن لوڈ کیا گیا تھا۔ ان ایپس میں ایسے کوڈ شامل تھے جن کی مدد سے یہ معلوم کیا جاسکتا تھا کہ کون سی ایپ کھلی ہے۔

جن ایپس کو ہٹایا گیا ہے ان میں Super Wallpapers Flashlight, Padenatef, Wallpaper Level, Contour level wallpaper, Iplayer & iwallpaper, Video maker,Color Wallpapers, Pedometer, Powerful Flashlight,Super Bright Flashlight, Super , Flashlight, Solitaire, Accurate , scanning of QR code, Classic card game, Junk file cleaning, Synthetic Z, File , Manager, Composite Z, Screenshot capture, Daily Horoscope Wallpapers, Wuxia Reader, Plus Weather, Anime Live Wallpaper, iHealth step counter, , Com.tyapp.fictionشامل ہیں۔

ان تمام ایپس کی اطلاع مئی2020 میں گوگل کو دی گئی تھی اور کمپنی نے رواں ماہ کے شروع میں ان ایپس کو ہٹا دیا تھا۔ اگرچہ ان ایپس کو ہٹانے کے بعد پلے اسٹور قدرے محفوظ ہوچکا ہے، لیکن اب بھی ایک سوال یہ ہے کہ گوگل کی جانب سے ایپس کو منظور کرنے کے سخت عمل کے باوجود اس قسم کی ایپس کس طرح پلے اسٹور پر اپنی جگہ بنا لیتی ہیں۔




Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *